MY BLOG

بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں 5 اگست سے قبل کرفیو نافذ کردیا گیا ہے

 

بہارت کے زیر انتظام کشمیر میں 5 اگست سے قبل احتجاج کی پیش گوئی کی وجہ سے  کرفیو نافذ کردیا گیا ہے – جس دن حکومت نے اس خطے کو اپنی خصوصی حیثیت سے محروم کیا۔  حکام کا کہنا ہے کہ کرفیو کا مقصد 5 اگست کو “یوم سیاہ” کے طور پر منانے کی منصوبہ بندی کرنے والے گروپوں کے ذریعہ تشدد کو روکنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کوڈ 19 کے باعث بڑے پیمانے پر اجتماعات کی بھی اجازت نہیں تھی۔ ریاست کو گذشتہ سال وفاق کے زیر انتظام دو علاقوں میں تقسیم کیا گیا تھا اور اس کی نیم خودمختار حیثیت منسوخ کردی گئی تھی۔

 

 اطلاعات کے مطابق ایک سال کے مکمل ہونے کے موقع پر  خطے میں بہت زیادہ  تناؤ کی کیفیت  ہے جس کی فجہ سے  مزید فورس کو  تعینات کردیا گیا ہے۔آئین کے  آرٹیکل 370  کا وہ حصہ  جس میں کشمیر کو خصوصی حیثیت کی ضمانت دی گئی تھی  اسے  کالعدم قرار دینے کے فیصلے  کی وجہ سے حصوصاً اس خطے  کے لوگوں میں اور بالعموم پوری دنیا میں کشمیر کے ساتھ ہمدردی رکھنے والے لوگوں  میں غم و غصہ پایا جا رہا ہے  ۔  اس موقع پر کرفیو کی وجہ سے  ہزاروں افراد کو حراست میں لیا گیا اور مواصلاتی بلیک آؤٹ کا حکم دیا گیا۔ اس علاقے میں جہاں  بہت سے  مظاہرے ہوئے اور سیکیورٹی فورسز کی اکثر عام شہریوں کے ساتھ جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئیں  وہیں پر ان  دنوں حیرت انگیز اقدام کے بعد ہزاروں کارکنان اور دیگر افراد کو گھروں سے اٹھا لیا گیا ۔

 

سخت لاک ڈاون اور ریاست کے تین سابق وزرائے اعلیٰ سمیت ہزاروں افراد کی نظربندی کی وجہ سے ، اس اقدام کے خلاف مظاہروں پر بڑے پیمانے پر قابو پالیا گیا۔ جموں وکشمیر ہندوستان کی واحد مسلم اکثریتی ریاست ہے اور اس خطے میں کئی دہائیوں سے بھارت مخالف مظاہرے ہورہے ہیں۔ یہ طویل عرصے سے دنیا کے سب سے خطرناک فلیش پوائنٹ میں سے ایک ہے اور یہ ایک انتہائی عسکری شکل والا علاقہ ہے۔ بھارت اور پاکستان دونوں ہی کشمیر پر مکمل طور پر  کنٹرول کا دعوی کرتے ہیں ، لیکن اس کے صرف کچھ حصہ پر دونوں کا  کنٹرول  ہے۔ جوہری ہتھیاروں سے لیس ہمسایہ ممالک نے کشمیر پر دو جنگیں لڑی ہیں ، حال ہی میں گذشتہ سال فروری میں اس علاقے پر فضائی حملوں کا ایک سلسلہ شروع ہوا تھا۔ ہندوستانی نیم فوجی دستوں نے لوگوں کی نقل و حرکت پر گہری نظر رکھی ہوئی ہے  اور ہر جگہ پر بھارتی  فوجی موجود ہیں ، اور پوری وادی کی سڑکیں  خاردار تاروں اور فورسز کی رکاوٹوں  کی وجہ سے مسدود ہیں۔ لوگوں سے  گھروں کے باہر  سخت  پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ ایسا لگتا ہے جیسے یہ خطہ سالوں سے  لاک ڈاؤن میں پڑا ہوا ہے۔ کشمیر کے خصوصی مراعات کی منسوخی کے بعد ریاست مہینوں سے کرفیو کی صورت حال میں تھی اور جب تمام چیزیں آہستہ آہستہ معمول پر آنے لگیں  تو کرونا کی مہلک  وبا پھیل گئی۔  اس سارے معاملے نے یہاں کے لوگوں کو زبردست نقصان پہنچایا – جو امید کر رہے ہیں کہ کرفیو صرف دو دن تک برقرار رہے گا اور اب نہیں رہے گا ان کی امیدیں دم توڑ گئیں ۔

 

Most Popular

Waseelah is an initiative which aims to promote tolerance and harmony. Lately, it has been plagued the horrors of extremism, and this ideology stems from the irrational and illogical reasoning given by people, with underlying motives, to destabilize the country. The waseelah wants to make the bigger picture obvious; our idea is to sow love and peace in world wide .

calendar

October 2020
M T W T F S S
« Aug    
 1234
567891011
12131415161718
19202122232425
262728293031  
To Top